کانگریس کا شرم ناک رویہّ!
کانگریس کا شرم ناک رویہّ!

✍️شکیل رشید (ایڈیٹر ممبئی اردو نیوز) ___________________ لوک سبھا کے انتخابات میں اپنی ’بہترکامیابی‘ کے بعد کانگریس نے ایک اور ’ تیر مارلیا ہے ‘۔ کانگریس کی ترجمان سپریا شرینیت نے مودی حکومت کی ایک مہینے کی کارکردگی پر رپورٹ کارڈ پیش کیا ہے ، جس میں مرکزی سرکار کوآڑے ہاتھوں لیا ہے ۔ یہ […]

کانگریس کا شرم ناک رویہّ!
غم جہاں سے نڈھال سراپا درد و ملال!!
غم جہاں سے نڈھال سراپا درد و ملال!!

✍️ جاوید اختر بھارتی محمدآباد گوہنہ ضلع مئو یو پی _____________ دینی ، سیاسی ، سماجی اور تعلیمی مضامین اکثر و بیشتر لکھا جاتاہے اور چھوٹے بڑے سبھی قلمکار لکھتے رہتے ہیں مگر ضروری ہے کہ کچھ ایسے موضوع بھی سامنے آئیں جو حقائق پر مبنی ہوں یعنی آپ بیتی ہوں مرنے کے بعد تو […]

غم جہاں سے نڈھال سراپا درد و ملال!!
جمہوری سیکولر سیاست میں دھرم کی مداخلت: ہندوستانی تناظر میں
جمہوری سیکولر سیاست میں دھرم کی مداخلت: ہندوستانی تناظر میں

✍️ محمد شہباز عالم مصباحی ____________ جمہوریت کا مفہوم ہی اس بات پر منحصر ہے کہ عوامی رائے کو فیصلہ سازی میں اولیت دی جائے اور ہر شہری کو یکساں حقوق اور مواقع فراہم کیے جائیں۔ سیکولرزم، جمہوریت کی بنیاد کو مضبوط کرتا ہے، جس کا مطلب یہ ہے کہ ریاست کو مذہبی معاملات میں […]

جمہوری سیکولر سیاست میں دھرم کی مداخلت: ہندوستانی تناظر میں
کیجریوال کا قصور
کیجریوال کا قصور

✍️ مفتی محمد ثناء الہدیٰ قاسمی نائب ناظم امارت شرعیہ بہار اڈیشہ و جھاڑکھنڈ ________________ دہلی کے وزیر اعلیٰ اروند کیجریوال کی پریشانیاں دن بدن بڑھتی جارہی ہیں، نچلی عدالت سے ضمانت ملتی ہے، ہائی کورٹ عمل در آمد پر روک لگا دیتا ہے، سپریم کورٹ میں عرضی داخل کرتے ہیں، اس کے قبل ہی […]

کیجریوال کا قصور
این جی اوز اور فلاحی اداروں میں علماء کا رول
این جی اوز اور فلاحی اداروں میں علماء کا رول

✍️ نقی احمد ندوی ________________ اس میں کوئی شک نہیں کہ علماء و فارغینِ مدارس اور طلباء کے اندر قوم و ملت اور ملک کی خدمت کا جو حسین جذبہ پایا جاتا ہے وہ عصری تعلیم گاہوں کے فارغین کے اندر عنقا ہے۔ این جی اوز اور فلاحی ادارے ان کے اس حسین جذبہ استعمال […]

این جی اوز اور فلاحی اداروں میں علماء کا رول
previous arrow
next arrow
Shadow

ميوچل فنڈ :تعریف اور قسمیں​

ميوچل فنڈ کی تعریف

تعریف:     میوچل فنڈ کو بلظ دیگر باہمی سرمایہ کاری یااجتماعی سرمایہ کاری کہہ سکتے ہیں۔ یہ سرمایہ کاری کی ایسی قسم ہے جو متعدد سرمایہ کاروں سے رقم جمع کرتی ہے تاکہ سیکیوریٹیز کے متنوع پورٹ فولیو میں سرمایہ کاری کی جاسکے، جیسے اسٹاک، بانڈز، یا دیگر اثاثے۔ اس کی دیکھ ریکھ پیشہ ورانہ فنڈ مینیجرز کرتے ہیں جو سرمایہ کاروں کی جانب سے سرمایہ کاری کے فیصلے کرتے ہیں۔ اس کو درج ذیل نقشہ میں دیکھ کر سمجھا جاسکتا ہے۔

 Net asset value: جب آپ میوچل فنڈ میں سرمایہ کاری کرتے ہیں، تو آپ فنڈ کے حصص یا یونٹ خرید رہے ہوتے ہیں۔ ہر حصہ مجموعی پورٹ فولیو میں متناسب ملکیت کی نمائندگی کرتا ہے۔ حصص کی تقسیم این اے وی(NAV) کے لحاظ سے ہوتی ہے۔ میچول فنڈ میں سرمایہ کاری کا ایک بڑا فاید ہ یہ ہوتا ہے اس میں خطرہ کم سے کم ہوتا ہے اورہونے والا خطرہ اجتماعی ہوتا ہے۔ یہی تنوع مجموعی سرمایہ کاری پر کسی ایک سیکورٹی کی کارکردگی کے اثرات کو کم کرتا ہے۔

میوچل فنڈ کے اقسام: میوچل فنڈز مختلف قسم کے ہوتے ہیں، ہر ایک کا اپنا سرمایہ کاری کا مقصد اور حکمت عملی ہوتی ہے۔ جیسے

  •  ایکویٹی فنڈز: equity funds  و بنیادی طور پر اسٹاک میں سرمایہ کاری کرتے ہیں۔
  • بانڈ فنڈز : bond funds   فکسڈ انکم سیکیورٹیز پر توجہ مرکوز کرتے ہیں۔
  •  متوازن فنڈز:  balanced funds   جو اسٹاک اور بانڈز کو یکجا کرتے ہیں
  • سیکٹر کے مخصوص فنڈز جو مخصوص صنعتوں یا شعبوں پر توجہ مرکوز کرتے ہیں۔ 

میوچل فنڈز میں سرمایہ کاری کے فائدے:

  • میوچل فنڈ تجربہ کار فنڈ مینیجرز کے ذریعے پیشہ ورانہ منی مینجمنٹ تک رسائی فراہم کرتا ہے جو مارکیٹ کا تجزیہ کرتے ہیں اور آپ کی جانب سے سرمایہ کاری کے فیصلے کرتے ہیں۔ یہ ان افراد کو بہتر مواقع فراہم کرتا ہے جن کے پاس اس شعبے کی نہ تو مہارت ہے اور نہ ہی وقت کہ اس پر اپنا دماغ کھپائیں۔
  • میوچل فنڈز لیکویڈیٹی پیش کرتے ہیں، یعنی آپ عام طور پر کسی بھی کاروباری دن NAV قیمت پر اپنے حصص خرید یا فروخت کر سکتے ہیں۔ اس سے آپ کی سرمایہ کاری میں داخل ہونا یا باہر نکلنا کچھ دوسرے سرمایہ کاری کے اختیارات کے مقابلے میں آسان ہو جاتا ہے۔
  •  میوچل فنڈز ان سرمایہ کاروں کے لیےبھی موزوں ہے جو مختلف طرح کے مالی خطرات مول لینے کی سکت رکھتے ہیں۔ کچھ فنڈز طویل المیعاد ہوتے ہیں  اور ان کا مرکز توجہ سرمایہ کا تحفظ ہوتا ہے، جبکہ دیگر میں زیادہ خطرے کے ساتھ  زیادہ منافع کمانا بھی ہوتا ہے۔ آپ کو  ایسے  فنڈ کا انتخاب کرنا ضروری ہے جو آپ کے سرمایہ کاری کے اہداف کو پورا کرتا ہو اور’’ آپ کس قدر خطرہ مول لے سکتے ہیں؟‘‘کا علم ہو۔

میوچل فنڈ کیسے کام کرتا ہے۔ درج ذیل نقشہ کو دیکھ کر سمجھیں

میوچل فنڈز کے خریدنے پر اخراجات:

  • یاد رہے کہ  میوچل فنڈز فنڈ کی دیکھ ریکھ کے لیے فیس اور اخراجات وصول کرتے ہیں۔ ان اخراجات میں انتظامی فیس، انتظامی اخراجات اور دیگر  چارجز شامل ہو سکتے ہیں۔ سرمایہ کاری  سے پہلے میوچل فنڈ سے وابستہ فیسوں کا جائزہ لینا اور اپنے منافع پر ان کے ممکنہ اثرات پر غور کرنا بہت ضروری ہے۔

حاصل کلام یہ ہے کہ میوچل فنڈز ان افراد کے لیے سرمایہ کاری کا ایک مقبول اور بہترین انتخاب ہیں جو مالیاتی اداروں میں پیشہ ور ماہرین کی ماتحتی میں اپنا پورٹ فولیو بنانا چاہتے ہیں ۔وہ متعدد سیکیورٹیز میں سرمایہ کاری کرنے، خطرے کو پھیلانے اور ممکنہ طور پر طویل مدتی مالی اہداف حاصل کرنے کا موقع فراہم کرتے ہیں۔ یعنی کہ آپ اپنی رقم میوچل فنڈ کمپنیوں کے حوالے کرتے ہیں۔ کمپنی کے ماہرین جسے اس مارکیٹ میں فنڈزمینیجر کہاجاتا ہے ، حاصل کردہ رقم کو سیکیورٹیز میں لگاتے ہیں۔ جس کے لیے تھوڑی سی رقم وہ چارج کرتے ہیں اور پھرمنافع کو سرمایہ کاروں کے درمیان NAV کے مطابق تقسیم کرتے ہیں۔واضح رہے کہ  کسی بھی طرح کی سرمایہ کاری سے قبل مکمل تحقیق کرنا، اپنے سرمایہ کاری کے مقاصد کا جائزہ لینا، اور سرمایہ کاری کا فیصلہ لینے سے قبل مالیاتی اداروں کے ماہرین سے مشورہ کرلینا بہتر ہوتا ہے۔

Leave a Comment

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Scroll to Top
%d bloggers like this: