تعزیہ سے بت پرستی تک!
تعزیہ سے بت پرستی تک!

از: شمس الدین سراجی قاسمی ______________ “أَيْنَ تَذْهَبُونَ” تم کہاں جارہے ہو ، محرم الحرام تو اسلامی تقویم ہجری کا پہلا مہینہ ہے اور تم نے پہلے ہی مہینہ میں رب کو ناراض کر دیا، اب یہ بات کسی پر پوشیدہ نہیں کہ محرم الحرام میں کئے جانے والے اعمال، بدعات ہی نہیں بلکہ کفریات […]

ماہِ محرم الحرام کی بدعات و خرافات
ماہِ محرم الحرام کی بدعات و خرافات

از: عائشہ سراج مفلحاتی __________________ محرم الحرام اسلامی سال کا پہلا مہینہ ہے، جو اشھر حرم، یعنی حرمت والے چار مہینوں میں سے ایک ہے، احادیث میں اس ماہ کی اہمیت وفضیلت مذکور ہے، یومِ عاشوراء کے روزے کی فضیلت بیان‌ کی گئی ہے، جو اسی ماہ کی دسویں تاریخ ہے؛ لیکن افسوس کی بات […]

معرکۂ کربلا کے آفاقی اصول اور پیغام
معرکۂ کربلا کے آفاقی اصول اور پیغام

از: محمد شہباز عالم مصباحی _______________ یہ تجزیاتی مقالہ کربلا کی عظیم الشان جنگ اور اس کے آفاقی پیغام کا جائزہ لیتا ہے۔ امام حسین (ع) اور ان کے ساتھیوں کی قربانیوں کو ایک تاریخی اور اخلاقی واقعے کے طور پر پیش کیا گیا ہے جو نہ صرف مسلمانوں بلکہ پوری انسانیت کے لیے ایک […]

تبصرہ نگاری ایک طرح کی گواہی ہے
تبصرہ نگاری ایک طرح کی گواہی ہے

✍️ڈاکٹر ظفر دارک قاسمی zafardarik85@gmail.com ________________ تبصرہ نگاری نہایت دلچسپ اور اہم فن ہے ۔ تبصرے متنوع مسائل پر کیے جاتے ہیں ۔ مثلا سیاسی ،سماجی ، ملکی ، قانونی احوال و واقعات وغیرہ وغیرہ ۔ لہٰذا اس موضوع پر مزید گفتگو کرنے سے قبل مناسب معلوم ہوتا ہے کہ پہلے تبصرے کا مفہوم و […]

ملک میں تین نئے فوجداری قانون کا نفاذ
ملک میں تین نئے فوجداری قانون کا نفاذ

✍️ مفتی محمد ثناء الہدیٰ قاسمی نائب ناظم امارت شرعیہ بہار اڈیشہ و جھاڑکھنڈ _________________________ انڈین پینل کوڈ (آئی پی سی) 1860، کرمنل پروسیجر کوڈ (سی آر پی سی) 1898 اور انڈین ایویڈنس ایکٹ 1872 ایک جولائی 2024ء سے تاریخ کے صفحات میں دفن ہوگئے ہیں، ان کی جگہ بھارتیہ نیائے سنہیتا، بھارتیہ ناگرگ سورکچھا […]

previous arrow
next arrow

مسلم قیادت کنفیوز ہے؟؟

قاسم سید

__________________

بہت دنوں بعد سہی مسلم لیڈرشپ کو عوامی سطح پر ایک ساتھ دیکھ کر قدرے اطمینان ہوا۔مسلم پرسنل لا بورڈ نے یہ پلیٹ فارم فراہم کیا۔
گیان واپی کے حوالہ سے یکے بعد دیگرے جس طرح کے فیصلے آئے ہیں اس سے مسلمانوں میں شدید اضطراب پایا جارہا ہے جبکہ پران پرتیشٹھا کے بعد ملک کے مختلف حصوں میں موب لنچنگ کی لہر آگئی ہے وہیں “غیرقانونی تعمیرات “کے نام پرمذہبی مقامات کو بلڈوز کرنے کا جنون دیکھا جارہا عدلیہ اور انتظامیہ کی برق رفتاری قابل حیرت ہی نہیں تشویشناک ہے-
مسلم قیادت کی مشترکہ پریس کانفرنس میں ایک احساس شدت کے ساتھ ابھر کر آیا کہ نازک معاملات میں ہر صورت عدالت کا فیصلہ تسلیم کرنے کی بات کہنے والوں نے پہلی بار عدلیہ کے رویے پر تحفظات کا اظہار کیا اور اس پر بڑھتے عدم اعتماد کا کھل کر اظہار کیا،نوجوانوں میں پائی جانے والی بےچینی کا اعتراف کیا سرکاری مشنری کے جانبدارانہ استعمال کا شکوہ کیا اس پریس کانفرنس کا مین اسٹریم میڈیا نے نوٹس لیا
مگر معذرت کے ساتھ اس کےساتھ یہ بھی محسوس کیاگیا کہ مسلم لیڈرشپ کنفیوز ہے ۔اسے حالات کابخوبی ادراک تو ہے مگر راستہ کیا ہے اس پر تردد ہے- اس کی سمجھ میں نہیں آرہا ہے کہ حالات کا مقابلہ کرنے کے لئے کیا کیا جائے۔الیکشن سر پر ہے مگر وہ کچھ کہنے کی پوزیشن میں نہیں-نہ کچھ تیاری ہے نہ رہنمائی۔نرم رہے یا گرم پریس کانفرنس میں یہ کنفیوژن بھی صاف نظر آیا-سرکار سے ڈائیلاگ کے دروازے دس سال سے بند کررکھے ہیں جبکہ کانگریس سے یہ تکلف نہیں تھا -ہم کو سیاسی طور پر ان دس سالوں میں آدھے بھارت سے صاف کردیا گیا -اب حکمران پارٹی کو زیر کرنے کی ساری امیدیں انڈیا الائنس سے وابستہ ہیں ۔بیس کروڑ لوگ مایوسی وناامیدی کا شکار نہ ہوں اس کا کیا راستہ ہے؟2024 کے بعد متوقع صورتحال میں کیا کرنا ہوگا ، عام مسلمان اب بھی اپنی مشترکہ قیادت کی طرف دیکھ رہا ہے-پرہجوم مسائل کے جنگل میں کوئی تو راستہ ہوگا جو امن وتحفظ باعزت زندگی اور,گارنٹی,کی طرف جاتا ہو –

Leave a Comment

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Scroll to Top
%d bloggers like this: