کانگریس کا شرم ناک رویہّ!
کانگریس کا شرم ناک رویہّ!

✍️شکیل رشید (ایڈیٹر ممبئی اردو نیوز) ___________________ لوک سبھا کے انتخابات میں اپنی ’بہترکامیابی‘ کے بعد کانگریس نے ایک اور ’ تیر مارلیا ہے ‘۔ کانگریس کی ترجمان سپریا شرینیت نے مودی حکومت کی ایک مہینے کی کارکردگی پر رپورٹ کارڈ پیش کیا ہے ، جس میں مرکزی سرکار کوآڑے ہاتھوں لیا ہے ۔ یہ […]

کانگریس کا شرم ناک رویہّ!
غم جہاں سے نڈھال سراپا درد و ملال!!
غم جہاں سے نڈھال سراپا درد و ملال!!

✍️ جاوید اختر بھارتی محمدآباد گوہنہ ضلع مئو یو پی _____________ دینی ، سیاسی ، سماجی اور تعلیمی مضامین اکثر و بیشتر لکھا جاتاہے اور چھوٹے بڑے سبھی قلمکار لکھتے رہتے ہیں مگر ضروری ہے کہ کچھ ایسے موضوع بھی سامنے آئیں جو حقائق پر مبنی ہوں یعنی آپ بیتی ہوں مرنے کے بعد تو […]

غم جہاں سے نڈھال سراپا درد و ملال!!
جمہوری سیکولر سیاست میں دھرم کی مداخلت: ہندوستانی تناظر میں
جمہوری سیکولر سیاست میں دھرم کی مداخلت: ہندوستانی تناظر میں

✍️ محمد شہباز عالم مصباحی ____________ جمہوریت کا مفہوم ہی اس بات پر منحصر ہے کہ عوامی رائے کو فیصلہ سازی میں اولیت دی جائے اور ہر شہری کو یکساں حقوق اور مواقع فراہم کیے جائیں۔ سیکولرزم، جمہوریت کی بنیاد کو مضبوط کرتا ہے، جس کا مطلب یہ ہے کہ ریاست کو مذہبی معاملات میں […]

جمہوری سیکولر سیاست میں دھرم کی مداخلت: ہندوستانی تناظر میں
کیجریوال کا قصور
کیجریوال کا قصور

✍️ مفتی محمد ثناء الہدیٰ قاسمی نائب ناظم امارت شرعیہ بہار اڈیشہ و جھاڑکھنڈ ________________ دہلی کے وزیر اعلیٰ اروند کیجریوال کی پریشانیاں دن بدن بڑھتی جارہی ہیں، نچلی عدالت سے ضمانت ملتی ہے، ہائی کورٹ عمل در آمد پر روک لگا دیتا ہے، سپریم کورٹ میں عرضی داخل کرتے ہیں، اس کے قبل ہی […]

کیجریوال کا قصور
این جی اوز اور فلاحی اداروں میں علماء کا رول
این جی اوز اور فلاحی اداروں میں علماء کا رول

✍️ نقی احمد ندوی ________________ اس میں کوئی شک نہیں کہ علماء و فارغینِ مدارس اور طلباء کے اندر قوم و ملت اور ملک کی خدمت کا جو حسین جذبہ پایا جاتا ہے وہ عصری تعلیم گاہوں کے فارغین کے اندر عنقا ہے۔ این جی اوز اور فلاحی ادارے ان کے اس حسین جذبہ استعمال […]

این جی اوز اور فلاحی اداروں میں علماء کا رول
previous arrow
next arrow
Shadow

خلیجی ممالک میں ہندوستانی قیدی

مفتی محمد ثناء الہدی قاسمی/نائب ناظم امارت شرعیہ بہار اڈیشہ و جھاڑکھنڈ

 حال ہی میں قطر کی عدالت نے آٹھ سابق ہندوستانی فوجیوں کو اسرائیل کے لیے جاسوسی کے الزام میں موت کی سزا سنائی ہے، ہندوستان نے اسے حیرتناک قرار دیا ہے، ہندوستانی حکومت قانونی اور سیاسی مذاکرات کے ذریعہ ان کی سزا معاف کرانے کے لیے تگ ودو کر رہی ہے، سزا یافتہ افراد کے اہل خاندان کی قطر کے حکمراں سے اپیل اور وزیر اعظم کے خارجی تعلقات کی بنیاد پر یہ امید کی جاتی ہے کہ سزا میں تخفیف ہو سکے گی، ایک موقع قطر کے قومی دن 18/ دسمبر کا بھی ہے، جس دن وہاں کے حکمراں بہت سارے قیدیوں کی سزا کی معافی کا اعلان کرتے ہیں، لیکن اس میں ابھی اڑتالیس دن باقی ہیں، قابل غور یہ ہے کہ اگر اس دن کے آنے سے قبل ہی سزا کی تنفیذ ہو گئی تو کیا ہوگا، یہ تو پھانسی کی سزا سنائی گئی تو ہمیں معلوم ہوا کہ یہ حضرات وہاں جیل میں جاسوسی کے الزام میں قید تھے، ان کے علاوہ 696ہندوستانی قیدی اور بھی ہیں، جن کی طرف کسی کی نگاہ نہیں ہے اور نہ ہی حکومت ان کو قید سے آزاد کرانے کے لیے فکر مند ہے، معاملہ صرف قطر کا ہی نہیں چند دوسرے مسلم ممالک کا بھی ہے۔ با خبر ذرائع کے مطابق پوری دنیا میں اس وقت 8441 ہندوستانی قیدمیں ہیں، جن میں سے 4630صرف خلیجی ممالک میں بند ہیں، بحرین میں 277، کویت میں 446، عمان میں 139، سعودی عرب میں 1461، اور متحدہ عرب امارات میں 1611افراد قید وبند کی صعوبتیں جھیل رہے ہیں، جن کا پرسان حال کوئی نہیں ہے، وزارت خارجہ اور ہندوستانی حکومت کو اس سمت میں بھی پیش قدمی کرنی چاہیے، تاکہ بے گناہ نا کردہ گناہوں سے بری ہو کر اپنے خاندان کو لوٹ سکیں، جو واقعۃ ًمجرم ہیں، ان کو قانونی  مدد پہونچائی جائے تاکہ وہ اپنی بات ان ممالک کی عدالتوں میں رکھنے کی پوزیشن میں ہوں، اس سے حکومت پر عوام کا اعتماد بڑھے گا، اور ہندوستانی شہریوں کی قید سے نکلنے کی شکل بن سکے گی، بہت سارے ایسے قیدی بھی ہیں جو بعض معاملات میں رقم ادا نہ کرنے کی وجہ سے بند ہیں، ان کی مالی مدد کرکے بھی  انہیں جیل کی اذیت سے نجات دلائی جا سکتی ہے۔

Leave a Comment

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Scroll to Top
%d bloggers like this: